امتنان

،آج کی رات اس طرح لفظ اترتے ہیں نگارش میں جس طرح کاسہ وقت کی سطح بلب پر الجھے ہوئے لمحے اتریں انہی الجھے ہوئے لمحوں میں گزاری ہے عمر نہ کسی دشت پے برسے نہ کسی سنگ پے ٹپکے ہوں مسلسل، پیہم ..چھلکے ہوئے جاموں کے تلے کون ٹھرتا ہے کس نے چاہا ہے کہ زات کا دامن بھیگے؟ کون پڑھتا ہے چھلکتے ہوئے لفظوں کی نظم؟ ،آج کی رات اس نظم کو کر دیتے ہیں اس آخری قاری کی بصارت کی نظر جس نے لفظوں کو میری زات کے بحروں میں…Read more …

Prosaic

I'm unable to write, the poem that I've become A poem of lost stanzas.. My limbs are torn and put back together Like syllables out of place I present no art I have no meaning I sooth no senses; I am prosaic but I can't be prose I can't be prose.. Arqum 23/2/2016Read more …

الفاظ

الفاظ جیتے ہیں الفاظ کی بھی عمر ہوتی ہے الفاظ بھی پروان چڑھتے ہیں الفاظ اپنے وقت سے پہلے نہیں مرتے انسان مرتے ہیں الفاظ جیتے ہیں قرطاس پر جو لفظ دکھتے ہیں بارش میں بھیگیں تو اصل میں بھیگتا قرطاس ہے الفاظ گویہ با ہنر تیراک ہوتے ہوں ہمیشہ بچ نکلتے ہیں لگے گر آگ جو قرطاس کو قرطاس جلتا ہے الفاظ جیسے موم ہوتے ہوں پگھل کر پھر سے جمتے ہیں کوئ تہوار اتا ہے تو ان الفاظ میں جو حرف رہتے ہیں لہجے پہنتے ہیں سنگھار کرتے ہیں الفاظ بھی…Read more …

Kintsugi

Every heart is fragile Every heart breaks Every heart mends itself To break in different place You have to break your heart For golden dust to glue And embellish your scars For them to shine anew As hiding is a toil And you'd grow weary Of lying to yourself That you were never teary And why do you hide? The story of your strength That your cracks can tell Let it show, it mends There will always be A yoshimasa for you Who wants you as you are Scarred, pale and blue *Kintsugi or Kintsukuroi is the Japanese…Read more …

Blue Garnet

Once I found a blue garnet  A little raw and a little rough  I cleaned it up and gave it a cut then a little more and a little more until I had no blue garnet I wish I had a blue garnet A little raw and a little rough Arqum 8/2/2016Read more …

“نعرہِ حرب”

آج سنا ہے پھر سےدل بےباک کے آنگن میںاس آنگن میں جو مدت سے پڑا ہے خالیبے جان، ناکشامہض گلوں کے خواب لئےفقط وعدہ بہار لئےسنسان، زہر آلود، تشنہ، بنجرپھر کود کے آئے ہیں جہنم کی فصیلوں سےہانپتے، غراتے ہوئے، کوڑھ شدہنار اگلتے ہوے افتاد کے پاگل کتےاور ضبط کی تیغوں پے قدیم لہو کے دھبےزنگ کی پوشش سے ڈھکے تھے جو، نکھر آئے ہیںورنہ پہلے بھی تو ناچیز غموں کے بونےاپنی جنجال بھری چال میں آتے ہی رہے ہیںپر اتنا اچھل پائے ہیں کے اندر آئیں؟  اب مگر ضبط کی تیغوں کو زرا دھونا ہوگا…Read more …

Valor

Be wary of a certain kind of valor, for it is in the trance of having suppressed the most feral of urges to sin, is when men are most susceptible to fall for the greatest of hitherto benign temptations.Read more …